پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس شروع ہونے سے قبل کل جماعتی رہنماوں کی میٹنگ ہوئی

پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس شروع ہونے سے قبل کل جماعتی رہنماوں کی میٹنگ ہوئی

پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس شروع ہونے سےایک دن قبل آج یہاں کل جماعتی میٹنگ منعقد کی گئی ۔

عزت مآب وزیراعظم جناب نریندر مودی نے میٹنگ میں کہا کہ ارکان پارلیمنٹ کی طرف سے انہیں یہاں قیمتی تجاویز موصول ہوئی ہیں اور دونوں ایوانوں میں بامعنی بحث ہونی چاہئے۔ انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ تجاویز کو مجموعی طور پر نافذ کرنے کی کوشش کی جائے گی ۔

وزیراعظم نے کہا کہ صحت مند جمہوریت کی ہماری روایت کے تحت ، عوام سے متعلق موضوعات کو دوستانہ ماحول میں اٹھایا جانا چاہئے اور سرکار کو ان مباحثوں پر جواب دینے کا موقع دیا جانا چاہئے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ایک موافق ماحول تیار کرنا سبھی کی ذمہ داری ہے ۔انہوں نے کہا کہ عوامی نمائندے دراصل زمینی حالات کو اچھی طرح سے جانتے ہیں ، اور اسی لئے بحث میں ان کی حصہ داری سے فیصلے کرنے کا عمل متمول ہوتا ہے۔ جناب مودی نے کہا کہ بیشتر ارکان پارلیمنٹ کی ٹیکہ کاری ہوچکی ہے اور امید ہے کہ اس سےخوداعتمادی کے ساتھ پارلیمنٹ کی سرگرمیوں کو پورا کرنے میں مدد ملے گی۔

وزیراعظم نے پارلیمنٹ میں صحت مند بحث پر زور دیا اور سبھی پارٹیوں کے رہنماوں سے تعاون کی درخواست کی۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ اجلاس خوش اسلوبی کے ساتھ جاری رہے گا اور اپنا کام پورا کرے گا۔انہوں نے کووڈ 19 وبا کی وجہ سے اپنی جان گنوانے والوں کے تئیں اظہار ہمدردی کیا۔

حصہ لیا۔ اس کے علاوہ میٹنگ میں وزیرمملکت جناب ارجن رام میگھوال اور جناب وی مرلی دھرن بھی موجود رہے۔

میٹنگ کے آغاز میں جناب جوشی نے کہا کہ سرکار ضابطوں کے تحت کسی بھی موضوع پر بحث کے لئے تیار ہے ۔ ایوان کو خوش اسلوبی سے چلانے میں سبھی پارٹیوں سے مکمل تعاون کی درخواست کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایوان میں سبھی موضوعات پر ایک منظر طریقہ سے بحث ہونی چاہئے ۔ جناب جوشی نے بتایا کہ پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس 2021 پیر کے روز 19 جولائی سے شروع ہوگا اور 13 اگست تک جاری رہے گا۔ اجلاس کی 19 نشستوں کے دوران 31 سرکاری کام (29 بل اور 2 مالی کام سمیت) پیش کئے جائیں گے ۔ چھ بل آرڈینینس کی جگہ لیں گے۔

مانسون اجلاس 2021 کے دوران پیش کئے جانے والے بل کی فہرست

1. لیجسلیٹیو کام

ٹریبیونل اصلاحات (سروس کی معقولیت اور شرائط )بل 2021- آرڈینینس کی جگہ لینے کے لئے ۔

انسالوینسی اینڈ بینکرپٹسی کوڈ (ترمیم) بل 2021 - آرڈینینس کی جگہ لینے کے لئے ۔

قومی راجدھانی خطہ اور آس پاس کے علاقوں میں ہوا کے معیار کے بندوبست کے لئے کمیشن بل ،2021 - آرڈینینس کی جگہ لینے کے لئے۔

ضروری ڈیفنس سروس بل 2021- آڑدینینس کی جگہ لینے کے لئے ۔

انڈین میڈیسن سنٹرل کونسل (ترمیم) بل 2021- آرڈینینس کی جگہ لینے کے لئے۔

ہومیوپیتھی سنٹرل کونسل (ترمیم) بل 2021- آرڈینینس کی جگہ لینے کے لئے۔

ڈی این اے ٹکنالوجی (استعمال اور اپلیکیشن ) ریگولیشن بل 2019۔

فیکٹرنگ ریگولیشن (ترمیم) بل، 2020

اسسٹیڈ ری پروڈکٹیو ٹکنالوجی (ریگولیشن ) بل، 2020

والدین اور سینئر سٹیزن دیکھ ریکھ اور بہبود (ترمیم ) ، بل 2019

فوڈ ٹکنالوجی انٹرپرینیرشپ اور منیجمنٹ کے قومی اداروں سے متعلق بل 2019 ، جیسا کہ راجیہ سبھا کے ذریعہ منظور کیا گیا ۔

جہازرانی کے لئے بحری امداد بل ، 2021 ، جیسا کہ لوک سبھا کے ذریعہ منظور کیا گیا ۔

بچوں کے انصاف (بچوں کی دیکھ بھال اور تحفظ ) ترمیمی بل ، 2021، جیسا کہ لوک سبھا کے ذریعہ منظور کیا گیا

سیروگیسی (ریگولیشن ) بل ، 2019

کوئلے کے علاقے( تحویل اور ترقی) سے متعلق ترمیمی بل ،2021

چارٹیڈاکاونٹینٹس ، کاسٹ اینڈ ورکز اکاونٹینٹس اور کمپنی سکریٹریز (ترمیم) بل، 2021

محدود ذمہ داری شراکت داری (ترمیمی) بل ، 2021

کینٹونمنٹ بل،2021

بھارتی انٹارٹیکا بل، 2021

سنٹرل یونیورسٹیز (ترمیمی) بل، 2021

انڈین انسٹیٹیوٹ آف فاریسٹ منیجمنٹ بل، 2021

پنشن فنڈ ریگولیٹری اینڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی (ترمیمی) بل، 2021

جمع بیمہ اور قرض گارنٹی کارپوریشن (ترمیمی) بل ، 2021

بھارتی بحری ماہی گیری بل، 2021

پیٹرولیم اور منرلس پائپ لائنز (ترمیمی) بل، 2021۔

ان لینڈ ویسیلس بل، 2021

بجلی (ترمیمی) بل، 2021

انسانی اسمگلنگ(روک تھام ، تحفظ اور بحالی) بل، 2021

کوکونٹ ڈیولپمنٹ بورڈ (ترمیمی) بل، 2021

II- مالی کام

21-2021 کے لئے ضمنی مطالبات زر پر زنٹیشن ، بحث اور ووٹنگ اور متعلقہ تصرف بل کو پیش کرنا ، غور کرنا اور منظور کرنا ۔

18-2017 کے لئےاضافی مطالبات زر پر پرزنٹیشن، بحث اور ووٹنگ اور متعلقہ تصرف بل کو پیش کرنا، غور کرنا اور منظور کرنا۔

میٹنگ میں کانگریس، ٹی ایم سی ، ڈی ایم کے، وائی ایس آر سی پی، شیو سینا، جے ڈی یو ، بی جے ڈی، ایس پی، ٹی آر ایس ، اے آئی ڈی ایم کے، بی ایس پی، این سی پی، ٹی ڈی پی ، اکالی دل، آر جے ڈی، اے اے پی، سی پی آئی، سی پی آئی (ایم)، آئی یو ایم ایل، اے جے ایس یو ، آر ایل پی، آر ایس پی ، ایم ڈی ایم کے ، تمل منیلا کانگریس، کیرالہ کانگریس، جے ایم ایم، ایم این ایف ، آر پی آئی، این پی ایف سمیت 33 سیاسی پارٹیوں کے رہنماؤں نے حصہ لیا۔

No stories found.
The News Agency
www.thenewsagency.in